وکی پیڈیا کے مطابق حسن احمد عبدالرحمان محمد البنا (Hassan ul Banna) اسلامی تحریک اخوان المسلمون کے بانی، 12 فروری 1949ء کو قاہرہ مصر میں 43 سال کی عمر میں گول مار کر قتل کیے گئے۔
1906ء میں مصر کی بستی محمودیہ کے ایک علم دوست اور دین دار گھرانے میں پیدا ہوئے۔ بچپن ہی میں قرآن حفظ کر لیا۔ابتدائی تعلیم اپنے گھر پر حاصل کی۔ 16سال کی عمر میں قاہرہ کے دار العلوم میں داخل ہوئے، جہاں سے 1927ء میں سند حاصل کی۔ 1923ء میں تصوف کے شاذلی طریقہ سے منسوب ہوئے اور شیخ عبد الوہاب حصافی کی خدمت میں تکمیل کی۔ 1927ء میں دار العلوم (مصر) سے فارغ ہوئے اور شہر اسماعیلیہ میں مدرس کی حیثیت سے تقرر ہوا۔ 1928ء میں اخوان المسلمون کا قیام عمل میں آیا۔
ذیل میں حسن البنا کی تصانیف کی تفصیل ملاحظہ ہو:
’’المرأۃ المسلمۃ‘‘، ’’تحدید النسل‘‘، ’’مباحث في علوم الحدیث‘‘، ’’السلام فی الاسلام‘‘، ’’قضیتنا‘‘، ’’الرسائل‘‘، ’’رسالۃ المنہج‘‘، ’’ رسالۃ الانتخابات‘‘ اور ’’مقاصد القرآن الکریم‘‘۔