سوات میں بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں ایک میئر، 6 تحصیل چیئرمین، 1648 جنرل کونسلر، 303 یوتھ کونسلر، 303 خواتین کونسلر اور 19 اقلیتی اُمیدواروں کے لیے 1406814 رجسٹرڈ ووٹر ہیں، ان میں 783614 مرد اور 623200 خواتین ووٹرز شامل ہیں، آج اہلِ سوات اس حوالے سے اپنا حقِ راہی کا استعمال کرنے جا رہے ہیں۔
بلدیاتی انتخابات کے لیے 822 پولنگ سٹیشن قایم کیے گئے ہیں، جن میں 2107 عملہ تعینات کیا گیا ہے۔
دوسری طرف ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر زاہد نواز مروت کا کہنا ہے کہ سوات پولیس نے پُرامن اور شفاف بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے لیے فول پروف سیکورٹی انتظامات کیے ہیں۔ سیکورٹی کے لیے ڈسٹرکٹ پولیس، ایف آر پی، ایلیٹ فورس، سی ٹی ڈی، سپیشل برانچ، لیڈیز پولیس، بم ڈسپوزل سکواڈ اور ڈسٹرکٹ سیکورٹی برانچ کے اہلکار خدمات انجام دیں گے۔
ضلع سوات کے 993 پولنگ سٹیشنوں پر 9 ہزار 579 پولیس جوانوں کا سیکورٹی کے لیے تعین کیا گیا ہے۔ 182 اہم حساس پولنگ سٹیشنوں پر 1500 سے زاید نفری متعین ہے۔
اس طرح الیکشن مانیٹرنگ کے لیے اینڈرائیڈ موبایل ایپلی کیشن سے استفادہ کیا جا رہا ہے۔
ضلعی انتظامیہ سوات نے لوکل گورنمنٹ الیکشن 2022ء کے تناظر میں الیکشن ڈے اور بعد میں امن و امان برقرار رکھنے اور کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی روک تھام کے لیے ضلع بھر میں ہر قسم کے آتشی ہتھیاروں کی نمایش اور جیت کی خوشی میں ریلی نکالنے اور جشن منانے پر 10 دنوں کے لیے دفعہ 144 کے تحت پابندی لگا دی ہے۔